سعودی عرب میں کون کیا اور کتنا کماتاہے؟رپورٹ میں حیران کن انکشاف

22  مارچ‬‮  2023

ریاض (این این آئی)ایک نئی تن خواہ گائیڈ کے مطابق سعودی عرب میں 190 مختلف کرداروں میں ملازمین کیا مانگ سکتے ہیں۔ ہیز مڈل ایسٹ نے اپنی سعودی عرب سیلری گائیڈ 2023 میں مملکت کی نو صنعتوں میں اکائونٹنگ اور فنانس، تعمیرات اورپراپرٹی، انسانی وسائل، لیگل، مینوفیکچرنگ، مارکیٹنگ اور ڈیجیٹل، پروکیورمنٹ اینڈ سپلائی چین، سیلزاورٹیکنالوجی کے

کرداروں کے لیے تن خواہوں کا جامع ڈیٹا فراہم کیا ہے۔میڈیارپورٹ کے مطابق سب سے زیادہ تن خواہیں تعمیرات اور جائیداد کے شعبے میں ملتی ہیں۔ان میں سے کچھ ملازمتوں پر ایک ماہ میں 93,000 ڈالر کا اضافہ ہوتا ہے۔اس میں اس پر بھی روشنی ڈالی گئی کہ سعودی عرب میں لیبرمارکیٹ مضبوط اورمتحرک ہے ، جس میں مختلف شعبوں میں بھرتی کی سرگرمیوں کی اعلی سطح ہے۔ 2022 میں ، 70 فی صد آجروں نے بتایا کہ ان کی تنظیم کے ملازمین کی تعداد میں اضافہ ہوا ، عام طور پر 10 فی صد سے زیادہ۔ یہ ان 43 فی صد آجروں کے مقابلے میں ایک نمایاں اضافہ ہے جنھوں نے 2021 میں اس کی اطلاع دی تھی۔سعودی عرب میں بھرتی کی سرگرمیوں میں سست روی کے کوئی آثار نظر نہیں آتے ہیں ، 89 فی صد آجروں نے 2023 میں مستقل ملازمین کو بھرتی کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔زیادہ تر آجر الریاض 69 فی صد، جدہ 56 فی صداور مشرقی صوبہ 41فیصد میں اپنی بھرتی کی کوششوں پر توجہ مرکوز کر رہے ہیں۔ بہترین ٹیلنٹ کے لیے مقابلہ کرنے والی تنظیموں کے ساتھ ، سب سے زیادہ مطلوبہ مہارتوں والے افراد کے لیے مواقع بہت زیادہ ہیں۔ہیز سعودی عرب سیلری گائیڈ سے یہ بھی پتا چلتا ہے کہ 2022 میں 53 فی صد ملازمین کی تن خواہوں میں اضافہ ہواہے۔ تبدیلی کی سب سے عام شرح 5 فی صد یا اس سے بڑھ کر 6 سے 10 فی صد کے درمیان ہوگئی۔یہ شرح ملک میں تن خواہوں میں اضافے کی عکاسی کرتی ہے۔79 فی صد آجروں کو توقع ہے کہ 2023 میں ان کے ادارے کے اندر تن خواہوں میں اضافہ ہوگا، جو معیشت کی درست سمت کی نشان دہی کرتا ہے۔اس گائیڈ پرتبصرہ کرتے ہوئے ہیزسعودی عرب کے سینیرمینیجرایرون فلیچر نے کہاکہ ایک متحرک لیبر مارکیٹ اور بڑھتی ہوئی تن خواہوں میں اضافہ،

مثبت معاشی اور روزگار نقطہ نظر کے ساتھ مل کر، سعودی عرب کو ملازمت کی تلاش میں افراد کے لیے ایک پرکشش منزل بناتا ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ سعودی معیشت عالمی اقتصادی غیر یقینی صورت حال کو نظرانداز کرتے ہوئے عالمی سطح پر سب سے تیزی سے ترقی کرنے والی

معیشت کے طور پر ابھری ہے۔متاثرکن کارکردگی کو ویژن 2030 پرکامیاب عمل درآمد سے منسوب کیا جاتا ہے ، جس نے نئے اقدامات اور منصوبوں کو متعارف کرایا ہے ،جس سے معیشت کو متنوع بنانے اور غیر تیل آمدنی پیدا کرنے میں مدد ملی ہے۔ ترقی، توسیع اورتبدیلی کے اہم محرک فلیگ شپ گیگا منصوبے ہیں، جو مملکت بھر کے مختلف علاقوں میں پھیلے ہوئے ہیں۔



کالم



فواد چودھری کا قصور


فواد چودھری ہماری سیاست کے ایک طلسماتی کردار…

ہم بھی کیا لوگ ہیں؟

حافظ صاحب میرے بزرگ دوست ہیں‘ میں انہیں 1995ء سے…

مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)

ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…