سارہ انعام قتل کیس اسلام آباد پولیس نے ایاز امیر کو گرفتار کرلیا

  اتوار‬‮ 25 ستمبر‬‮ 2022  |  14:30

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ٗ این این آئی )اسلام آباد پولیس نے سینئر صحافی ایاز امیر کو قتل کیس میں گرفتار کرلیا ہے۔ذرائع کے مطابق اسلام آباد کے تھانہ شہزاد ٹاؤن کی پولیس نے ایاز امیر کو اُن کی بہو سارہ انعام کے قتل کیس میں گرفتار کیا ہے۔اسلام آباد پولیس نے گزشتہ روز ایاز امیر کو مقدمے میں نامزد کیا تھا۔

پولیس کے مطابق مقدمےمیں اب 302 کے ساتھ دفعہ 109 بھی شامل کی گئی ہے، ایاز امیر کی سابقہ اہلیہ کو بھی شامل تفتیش کیا جائے گا ۔یاد رہے گزشتہ روز ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت نے بیوی کے قتل میں سینئر صحافی ایاز میر کے بیٹے شاہ نواز امیر کا 2 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا۔تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت اسلام آباد میں سول جج مبشرحسن چشتی کے سامنے ملزم شاہنواز میر کو پیش کیا گیا تو جج نے استفسار کیا شاہنواز کون ہے؟ آپ کو کب گرفتار کیاگیا؟۔ملزم شاہنواز نے بتایا کہ مجھے جمعہ کی صبح گرفتار کیاگیا، تفتیشی افسر نے بتایا کہ شاہنوازنے اپنی اہلیہ کوبے دردی سے قتل کیا ہے۔جج نے شاہنواز کے وکیل سے استفسار کیا کچھ بولنا چاہتے ہیں؟ جس پروکیل شاہنواز نے کہا بلائنڈ مرڈر ہے، پہلا ریمانڈ ہے، کوئی اعتراض نہیں۔جج نے ملزم سے مکالمے میں کہا آپ کو علم ہے آپ پر دفعہ 302لگی ہے، پولیس تفتیشی افسر بتایا کہ ملزم نامزد ہے برآمدگی کرنی ہے، ملزم نے اہلیہ کوبیرون ملک سے بلاکرقتل کیا۔وکیل ملزم نے بتایا کہ یہ قتل صرف الزام کی حد تک ہے، پولیس نے عدالت سے10دن کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی۔عدالت نے پولیس کی شاہنواز کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا پر فیصلہ محفوظ کرلیا، بعد ازاں عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے سینئر صحافی ایاز میر کے بیٹے شاہ نواز امیر کا 2 روزہ جسمانی ریمانڈمنظور کرلیا۔



موضوعات:

زیرو پوائنٹ

عاشق مست جلالی

میری اظہار الحق صاحب سے پہلی ملاقات 1994ء میں ہوئی‘ یہ ملٹری اکائونٹس میں اعلیٰ پوزیشن پر تعینات تھے اور میں ڈیلی پاکستان میں میگزین ایڈیٹر تھا‘ میں نے اس زمانے میں مختلف ادیبوں اور شاعروں کے بارے میں لکھنا شروع کیا تھا‘ اظہار صاحب نے تازہ تازہ کالم نگاری شروع کی تھی‘ان کی تحریر میں روانی‘ ادبی چاشنی اور ....مزید پڑھئے‎

میری اظہار الحق صاحب سے پہلی ملاقات 1994ء میں ہوئی‘ یہ ملٹری اکائونٹس میں اعلیٰ پوزیشن پر تعینات تھے اور میں ڈیلی پاکستان میں میگزین ایڈیٹر تھا‘ میں نے اس زمانے میں مختلف ادیبوں اور شاعروں کے بارے میں لکھنا شروع کیا تھا‘ اظہار صاحب نے تازہ تازہ کالم نگاری شروع کی تھی‘ان کی تحریر میں روانی‘ ادبی چاشنی اور ....مزید پڑھئے‎