ریاست مدینہ میں سود،کرپشن،بے حیائی اور لاقانونیت جائز نہیں، ایک سال میں اربوں ڈالر قرضہ لینے پر علامہ خادم رضوی نے حکومت کو کھری کھری سنا دیں

  منگل‬‮ 12 ‬‮نومبر‬‮ 2019  |  21:14

لاہور (آن لائن) تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ علامہ خادم رضوی نے کہا ہے کہ ریاست مدینہ میں سود،کرپشن،بے حیائی اور لاقانونیت جائز نہیں۔ عوامی مسائل کا حل حکمرانوں کی ترجیحات میں شامل نہیں۔قرضوں کی مخالفت کرنے والی حکومت نے ایک سال میں 10ارب 77کروڑ ڈالر کے قرضے لے لیے ہیں۔موجودہ حکمرانوں کو صرف پاکستان کو معاشی طور پر تباہ کرنے کیلئے مسلط کیا گیا ہے۔ریاست مدینہ کے بار بار نعرے لگاکر وزیر اعظم قوم کوبیوقوف نہ بنائیں۔ریاست ہر شہری کو برابر کی حقوق فراہم کرنے کی پابند ہے لیکن موجودہحکمران اس کے برعکس چل رہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار


انہوں نے مختلف وفود سے ملاقات کے دوران گفتگوکرتے ہوئے کیا۔علامہ خادم رضوی کا مزید کہنا تھا وزیر اعظم انتخابات سے قبل بار بار قرضوں لینے کی مخالفت کرتے رہے لیکن اقتدار میں آنے کے بعد سب سے پہلا کام ہی قرضے لینے سے شروع کیا۔ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھروں کے اعلانات بھی صرف سیاسی بیان ثابت ہوئے ہیں۔اسی حکومت کے وزیر نے خود کہا ہے کہ عوام نوکریوں کیلئے حکومت کی طرف نہ دیکھے۔کیا ایسے حکمران عوام کیلئے قابل قبول ہو سکتے ہیں۔

loading...