رحمانیہ مسجد میں ہونے والا دھماکے کیلئے کونسا طریقہ کار استعمال کیا گیا ؟مسجد میں خطبہ دینے والے خطیب مولوی شہید

  جمعہ‬‮ 24 مئی‬‮‬‮ 2019  |  15:30

کوئٹہ (این این آئی)صوبائی دارالحکومت کوئٹہ کے نواحی علاقے پشتون آباد کی مسجد میں دھماکے نتیجے میں ایک شخص شہید اور تیرہ زخمی ہوگئے جن میں زخمیوں میں بعض کی حالت تشویشناک ہے جس کے باعث شہادتوں میں اضافے کاخدشہ ہے ،اطلاعات کے مطابق پشتون آباد میں واقع رحمانیہ مسجد میں دھماکا نماز جمعہ کے دوران ہوا،مسجد نمازیوں سے بھری ہوئی تھی۔پولیس کے مطابقدھماکے میں ایک شخص جاں بحق اور ایک درجن سے زائد افراد زخمی ہوگئے ۔ ذرائع کے مطابق مسجد میں دھماکے کے وقت پچاس سے زائد افراد موجود تھے اور دھماکے تقریباً ایک بجے کے قریب ہوا۔دھماکےرپورٹس


میں مزید بتایا گیا ہے کہ مسجد میں دھماکہ پلانٹڈ ڈیوائس کے ذریعے سے کیا گیا۔دھماکہ منبر کے نزدیک کیا گیا جس وجہ سے خطبہ دینے والے مولوی بھی  شہید ہو گئے۔دھماکے سے قریبی عمارتوں کے شیشے ٹوٹ گئے جس سے علاقہ مکینوں میں خوف و ہراس پھیل گیا ۔دھماکے کے بعد سیکورٹی فورسز اور ریسکیو ٹیمیں بھاری تعداد میں جائے وقوعہ پرپہنچیں اور دھماکے سے متاثر ہونے والے نمازیوں کو ہسپتال منتقل کیازخمیوں میں بعض کی حالت نازک ہے جس کے باعث شہادتوں میں اضافے کا خدشہ ہے ۔سیکیورٹی فورسز نے جائے وقوعہ کو حصار میں لے کر واقعے کی تفتیش شروع کردی ۔ پولیس کے سینئر اہلکار کے مطابق جمعہ کے موقع پر کوئٹہ میں سیکورٹی الرٹ تھی، شہرکے مختلف علاقوں میں پولیس اور ایف سی کے اضافی اہلکارتعینات کئے گئے تھے ،مساجد اور امام بارگاہوں پر بھی سکیورٹی کے خصوصی انتظامات تھے۔شہربھر میں کوئیک رسپانس فورس کی تعیناتی کے علاوہ ایف سی کی پٹرولنگ بھی جاری رہی۔نماز جمعہ کے دوران ایس ایچ اوزکو گشت جبکہ ایس پیز کو سرکل میں رہنے کی ہدایت کی گئی تھی۔

موضوعات:

loading...