پاکستان کی حدود میں کرتارپور راہداری منصوبے پر کام کہاں تک پہنچا؟پڑھ کر سکھ برادری میں خوشی کی لہر دوڑ جائیگی

  بدھ‬‮ 22 مئی‬‮‬‮ 2019  |  15:36

نارووال(سی پی پی)کرتارپور راہداری منصوبے پر کام تکمیل کے آخری مراحل میں داخل ہو گیا ہے، انتظامیہ کا کہنا ہے کہ سڑک تکمیل کے آخری مراحل میں ہے، 6 ستونوں پر کام باقی ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان نے کرتارپور راہداری منصوبے پر کام تیز کر دیا ہے۔سڑک تکمیل کے آخری مرحلے میں داخل ہو گئی ہے، ڈیرہ بابا گرونانک کے احاطے کی توسیع کے لیے تالاب پر ابھی کام جاری ہے۔تعمیراتی کام کے دوران دربار کرتارپور کا احاطہ کشادہ کر دیا گیا، امیگریشن حکام کے لئے عمارت بھی تیار کی جا رہی ہے، دوسری طرف سکھ یاتریوں کے لیے چیک


اِن کائونٹر اور انتظار گاہ بھی آخری مراحل میں داخل ہو گئی ہے۔یاد رہے گزشتہ ماہ منصوبے پر پاک بھارت تکنیکی ماہرین نے مذاکرات کیے تھے، جس میں راہ داری سے منسلک سڑک کی تعمیر، باڑ لگانے اور نقشوں پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا، بھارت نے ڈیرہ بابا نانک سے عالمی سرحد تک فلائی اوور بنانے کی پیش کش بھی کی۔مذاکرات میں بھارتی ماہرین نے سو میٹر لمبا فلائی اوور بنانے کی تجویز دی، بھارتی موقف تھا کہ برسات میں اس علاقے میں پانی جمع ہوجانے سے دشواری ہوتی ہے، پاکستانی ماہرین کا کہنا تھا کہ بھارتی پیش کش پر اپنی رپورٹ متعلقہ وزارتوں کو پیش کی جائے گی۔

موضوعات:

loading...