نئے پاکستان میں اب یہ مراعات نہیں ہوں گی، حکومت نے گریڈ 1 سے 17 تک ملازمین اور ڈاکٹرز کے کون سے الاؤنس ختم کر دیے؟

  بدھ‬‮ 12 دسمبر‬‮ 2018  |  21:42

سرگودھا(آن لائن)حکومت پنجاب نے ڈویژن بھر میں 255 بیسک ہیلتھ یونٹس پر کام کرنے والے گریڈ1 سے 17 تک ملازمین اور ڈاکٹر ز کا ہاؤس رینٹ اور کنوینس الائنس ختم کر یا،ڈاکٹرز، ہیلتھ ٹیکنیشنز، مڈوائف، ڈسپنسر،نائب قاصداور مالی کو دی جانے والی مراعات ختم ،جس سے سینکڑوں ملازمین مالی مشکلات کا شکار، سرکاری رہائشیں 70 سے 80 فیصد رہائش کے قابل نہیں،چند د ٹوٹی پھوٹی رہائشیں موجود جن کو تعمیر بھی 40 سال قبل کی ہے،حکومت سے الاؤنس بحال کرنے کا مطالبہ،1500 سے 10 ہزار تک ماہانہ ہاؤس الاؤنس اور ٹرانسپوٹیشن کی مد میں وصول کیا جاتا تھا،ذرائع کے مطابق


سرگودھا ڈویژن کے چاروں اضلاع خوشاب ،میانوالی ، بھکر اور سرگودھا میں 255 بیسک ہیلتھ یونٹس موجود ہیں ،ضلع سرگودھا 131 ،ضلع خوشاب 43 ،ضلع میانوالی 40 اور ضلع بھکر میں 41 بیسک ہیلتھ یونٹ موجود ہیں،جن کی عمارتیں 40 سے 50 سال پرانی بوسیدہ ہیں، 70 سے 80 فیصد رہائشیں رہنے کے قابل ہی نہیں ہیں،گریڈ 1 سے 17 تک کے ملازمین جن میں نائب قاصد ، مالی،مڈوائف، ڈسپنسر،ہیلتھ ٹیکنیشن ، پیرا میڈیکل سٹاف سمیت ڈاکٹر کو دی جانے والے ہاؤس الاؤنس اور کنوینس الاؤنس کی مد میں دی جانے والی مراعت ختم کر دی گئی ہیں، کلاس فورملازمین کو ہاؤ س الاؤنس کی مد میں 1500 ، مڈوائف کو 3 ہزار اسی طرح مختلف گریڈز کے ملازمین کو 10 ہزار رروپے تک ہاؤس الاؤنس اور کنوینس الاؤنس ختم کر دیا،محکمہ ہیلتھ ذرائع کے مطابق بیسک ہیلتھ یونٹس میں موجود رہائشیں 40 سال سے پہلے کی ہیں جن میں سے 80 فیصد سے زائد رہائش کے قابل ہی نہیں ہیں،دور دراز کے علاقوں میں رہنے والے ملازمین سخت پریشانی میں مبتلا ہو گئے ہیں، انہوں نے کہا کہ بغیر ہاؤس الاؤنس کے بیسک ہیلتھ یونٹس پر ڈیوٹی دینے سے مالی معاملات بری طرح متاثر ہو چکے ہیں،جس پر انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بیسک ہیلتھ سنٹر کی میں موجود رہائشوں کی تعمیروں مرمت کروائی جائے اور حکومت کی جانب سے دی جانے والی مراعات کو بحال کیا جائے۔

loading...