خادم حسین رضوی اور پیر افضل کے خلاف غداری کا مقدمہ،مولانا فضل الرحمان کا نام بھی شامل کرنے کی استدعا

  جمعہ‬‮ 9 ‬‮نومبر‬‮ 2018  |  20:14

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) تحریک لبیک کے خادم حسین رضوی کے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں غداری کیس کی درخواست دائر کر دی گئی، ایک نجی ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق درخواست میں پنجاب حکومت، ہوم سیکرٹری سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا ہے، جسٹس عاطر محمود 12 نومبر کو درخواست پر سماعت کریں گے،یہ درخواست لاہور ہائی کورٹ میں شہری شبیر علی نے دائر کی، اس درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ عدلیہ کے ایک فیصلے کو جواز بناتے ہوئے تین روز تک شہر کی سڑکیں بلاک کی گئیں، سڑکوں کی بندش سے شہریوں کے بنیادی

انسانی حقوق متاثر ہوئے اور اس درخواست میں مزید یہ بھی کہا گیا کہ اس حوالے سے مولانا فضل الرحمان اور پیر قادری نے ججز اور ریاست کے خلاف تقاریر کی ہیں، عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ ان دونوں کے خلاف بھی غداری کا مقدمہ درج کیا جائے۔ دوسری جانب سول سوسائٹی نے آسیہ مسیح اپیل کے سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد مال روڑ لاہور پر احتجاج اور توڑ پھوڑ کرنے پر مولانا خادم حسین رضوی کے خلاف اندراج مقدمے کی درخواست دائر کر دی۔ درخواست سول سوسائٹی کے رہنما عبداللہ ملک کی جانب سے دائر کی گئی۔ سیشن کورٹ میں دی گئی درخواست میں درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ تحریک لبیک کے رہنما مولانا خادم حسین رضوی نے چیف جسٹس پاکستان سمیت دیگر معزز ججوں کو قتل کرنے کی دھمکی دی۔ مولانا خادم حسین رضوی نے ملک میں انتشار پھیلانے کی کوشش کی۔درخواست گزار کے مطابق درخواست دینے کے باوجود تھانہ سول لائن پولیس نے خادم حسین رضوی کے خلاف مقدمہ درج نہیں کیا اس لئے عدالت سے استدعا ہے کہ عدالت خادم حسین رضوی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دے۔

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں