ن لیگ،تحریک انصاف یا پیپلزپارٹی؟آئندہ انتخابات میں جو بھی کامیاب ہوتا ہے پاکستان اور چین کے تعلقات پر اس کا کیا اثر پڑے گا؟چائنہ ڈیلی کی خصوصی رپورٹ

  جمعرات‬‮ 19 جولائی‬‮ 2018  |  23:43

بیجنگ(آئی این پی)پاکستان میں انتخابات کے بعد چین پاکستان اقتصادی راہداری(سی پیک) پر عمل درآمد کے مثبت اثرات مرتب ہوں گے،کیونکہ پوری پاکستانی قوم سی پیک کی مسلسل حمایت کر رہی ہے اور انتخابات کے بعد بھی یہ منظر مثبت دیکھائی دیتا ہے، سی پیک آنے والی حکومت کی بھی ترجیح رہے گی،ان خیالات کا اظہار چین کے معروف اخبار چائنہ ڈیلی نے اپنی ایک تازہ ترین رپورٹ میں کیا ہے،اخبار لکھتا ہے کہسی پیک پاکستان کا ایک اہم فیصلہ ہے پاکستان کے 22کروڑ عوام سی پیک کی مکمل حمایت کرتے ہیں اور پاکستانی ادارے خاص طور پر پاکستانی فوج

اس کی نگران ہے،سی پیک کے منصوبے بین الاقوامی ذمہ داری اور پاکستان کا اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے کا ریکارڈ بہت اچھا ہے، جس کا مطلب یہ ہے کہ پاکستان اپنی ذمہ داریوں کے بارے میں مکمل طور پر آگاہ ہے اور اس کے عمل سے اس کا اظہار بھی ہوتا ہے،تاہم سی پیک دوطرفہ فریم ورک کے تحت رضامندی سے شروع کیا گیا ہے اور یہ چین اور پاکستان دونوں ممالک کے لیے فائدہ مند ہے اور یہ مساوی فوائد کی ایک مکمل مثال ہے سی پیک کے تحت تمام منصوبے پاکستان کیلئے انتہائی اہم ہیں اور ان سے پاکستان کی معیشت کو فروغ حاصل ہو گا، روزگار اور سلامتی کے حسین مواقع پیدا ہوں گے،سی پیک پر تمام چھوٹی اور بڑی سیاسی جماعتوں کے درمیان مکمل اتفاق رائے موجود ہے کہ اصولی طور پر سی پیک کی حمایت کی جائیگی۔جبکہ پاکستان کے عوام بجلی کی فراہمی میں اضافے کی صورت میں پہلے ہی سی پیک کے فوائد سے مستفید ہو رہے ہیں۔اخبار مزید لکھتا ہے سی پیک سے پہلے بجلی کی کمی سے پورا ملک بری طرح متاثر ہو رہا تھا اور پاکستان کی صنعتیں کاروباری دنیا میں مقابلہ نہیں کر پا رہی،بنیادی ڈھانچے کی بہتری نے پاکستان کی عوام کیلئے سفر اور رابطے آسان کر دیئے ہیں جبکہ سی پیک سے قبل بنیادی ڈھانچہ فرسودہ اور پرانا ہو گیا تھا،خصوصاً پاکستان میں سامراجی دور کا ریلوے نظام موجود تھا جو برطانیہ نے شروع کیا تھا۔مگر اب پاکستانی نوجوانوں کیلئے روزگار کے مواقع پیدا ہو چکے ہیں،نئے کاروبار شروع ہو رہے ہیں اور لامحدود مواقع دستیاب ہیں، سب سے بڑھ کر یہ کہ چین اور پاکستان کے تعلقات اس قدر مضبوط ہیں کہحکومتوں کی تبدیلی دو آئرن برادرز پر کبھی بھی اثر انداز نہیں ہوئی،حقیقت یہ ہے کہ گذشتہ چھ دہائیوں کے دوران دونوں ممالک میں مختلف حکومتیں برسراقتدار آئی ہیں،لیکن قیادت کی تبدیلی کے باوجود چین پاکستان تعلقات کبھی متاثر نہیں ہوئے اور دوستی مضبوط سے مضبوط تر ہوتی گئی ہے، عام طور پر کہا جاتا ہے کہ دونوں ممالک اور ان کے عوام کے درمیان محبت کا جذبہ،دوطرفہ اعتماد اور احترام معاشرے کے ہر طبقے میں موجود ہے،ہمارے تعلقات سدا بہار اور کثیر الجہت ہیں۔جہاں ہم ایک دوسرے کے شراکت دار ہیں لیکن سب سے بڑھ کر یہ کہ ہم سدا بہار دوست ہیں۔اخبار مزید لکھتا ہے کہ آئندہ انتخابات میں جو بھی کامیاب ہوتا ہے پاکستان اور چین کے تعلقات مزید مضبوط ہوں گے روائیتی طور پر حلف اٹھانے کے بعد پاکستان کے منختب رہنماؤں نے ہمیشہ جلد سے جلد دستیاب سہولت میں چین کا دورہ کیا ہے،ماضی کے تجربات کی بنیاد پر ہم پیشنگوئی کر سکتے ہیں کہ سی پیک کا مستقبل بہت روشن ہے اوروہاں مثبت تبدیلی آئیگی،انتخابات اور نئی حکومت سی پیک کو دونوں ممالک کے لیے زیادہ موثر اور زیادہ مفید بنائے گئے،پاکستان کو معاشی طور پر آگے بڑنے کیلئے سی پیک کی بہت ضرورت ہے پاکستان کی عوام سی پیک کی پست پر کھڑے ہیں اور پاکستان کی مسلح افواج سی پیک کی زمہ دار اور نگران ہیں،ہمارے چینی دوستوں کو پاکستان کے قانونی اور عدالتی نظام پر مکمل یقین رکھ سکتے ہیں اور پاکستانی نظام ہمیں یقین دلا سکتا ہے کہ پاکستان میں چین کی سرمایہ کاری ایک بہت روشن مستقبل کے ساتھ محفوظ ہے۔

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں