سول ملٹری ریلیشن شپ کے ساتھ ساتھ حکومت نے سول جوڈیشری تعلقات بھی ٹھیک کر لئے ہیں، کیا حکومت میں اس سنہری موقعے سے فائدہ اٹھانے کی صلاحیت ہے؟ کیا واقعی نواز شریف کے بعد زرداری صاحب کی باری بھی آ رہی ہے؟ جاوید چودھری کا تجزیہ

  بدھ‬‮ 5 دسمبر‬‮ 2018  |  21:50

آبادی پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ ہے‘ ہم تعداد میں بھی زیادہ ہیں اور نالائقی اور نااہلی میں بھی پوری دنیا سے آگے ہیں‘ ہم اگر نالائقی کم نہیں کر سکتے تو کم از کم ہم آبادی تو کم کر سکتے ہیں‘ اس ملک میں آپ کو ڈرائیونگ لائسنس کیلئے ٹریننگ چاہیے لیکن باپ اور ماں بننے کیلئے کسی ٹریننگ‘ کسی لائسنس کی ضرورت نہیں‘ پاکستان ایک ایسا ملک ہے جس میں تمام لوگوں کی شادی ہو جاتی ہے اورآپ کو نشئیوں اور بھکاریوں کے پیچھے بھی بیوی اور دو تین بچے کھڑے نظر آتے ہیں‘ میں وزیراعظم اور

چیف جسٹس دونوں کو خراج تحسین پیش کرنا چاہتا ہوں‘ یہ پہلے وزیراعظم اور یہ پہلے چیف جسٹس ہیں جنہوں نے آبادی اور ماحولیات دونوں اصل ایشوز کو اہمیت دی‘ حالیہ تاریخ میں بنگلہ دیش اور ایران دو اسلامی ملک ہیں جنہوں نے مسجدوں اور امام مسجدوں کے ذریعے آبادی کنٹرول کی‘ ہم بھی اگر یہ کر لیں تو پاکستان ایک مختلف ملک بن جائے گا‘ آج چیف جسٹس نے سمپوزیم سے خطاب کرتے ہوئے جوکہا، چیف جسٹس کا گلہ ٹھیک ہے‘ ہم اگر آج 1872ء کے قانون کے تحت انصاف قائم کرنے کی کوشش کریں گے تو انصاف کیسے ہو گا‘ پارلیمنٹ آخر اپنا اصل کردار کیوں نہیں ادا کرتی‘ یہ ہمارا آج کا بنیادی ایشو ہو گا جبکہ عمران خان نے ساڑھے تین ماہ میں دوسری بار چیف جسٹس سے ملاقات کی‘ یہ ملاقات ثابت کرتی ہے سول ملٹری ریلیشن شپ کے ساتھ ساتھ حکومت نے سول جوڈیشری تعلقات بھی ٹھیک کر لئے ہیں‘ حکومت اگر اب بھی ڈیلیور نہیں کرتی تو یہ بہت بڑی بدقسمتی‘ بہت بڑی نالائقی ہو گی‘ کیا حکومت میں اس سنہری موقعے سے فائدہ اٹھانے کی صلاحیت ہے‘ ہم یہ بھی ڈسکس کریں گے اور آج شیخ رشید نے ایک دلچسپ انکشاف کیا، کیا واقعی نواز شریف کے بعد زرداری صاحب کی باری بھی آ رہی ہے‘ ہم آج کے پروگرام میں یہ بھی ڈسکس کریں گے‘ ہمارے ساتھ رہیے گا۔

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں