آبنائے ہرمز سے تیل کی آزادانہ سپلائی کو یقینی بنایا جائے گا : امریکہ

  پیر‬‮ 17 جون‬‮ 2019  |  11:45

واشنگٹن(این این آئی)امریکی سیکٹریٹری آف اسٹیٹ مائیک پومپیو نے خلیج میں تیل بردار جہازوں پر حملوں کے حوالے سے ایران پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا خطے میں تیل کی آزادانہ رسد کو یقینی بنائے گا۔امریکی ٹی وی کو ایک انٹرویو میں پومپیو نے کہا کہ آپ کو یہ تصور کرنا چاہیے کہ ہم یہاں سےتیل کی آزادانہ سپلائی کو یقینی بنانے جارہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک عالمی امتحان اور پوری دنیا کے لیے اہم ہے اور امریکا سفارتی اور دیگر تمام وسائل بروئے کار لاتے ہوئے موثر نتائج حاصل کرے گا۔تیل بردار جہازوں پر


ہونے والے حملوں کی ذمہ داری ایران پر عائد کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ جو کچھ یہاں ہوا وہ غلطی سے نہیں ہوا۔مائیک پومپیو نے کہا کہ یہ ایران کی جانب سے تجارتی جہازوں، آزادانہ نقل و حرکت پر حملے تھے جس کا واضح مقصد یہاں سے تیل کی سپلائی روکنا تھا۔امریکی سیکریٹری اسٹیٹ نے اس حوالے سے کس طرح کی کارروائی ہوگی اس پر کوئی اشارہ نہیں دیا تاہم ایران کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔خیال رہے کہ دنیا کی ایک تہائی تیل کی سپلائی آبنائے ہرمز سے گزرتی ہے جو ایران کے شمال کے چھوٹے سے حصے سے گزرتی ہوئی خلیج اور خلیج عمان تک پھیلی ہوئی ہے۔قبل ازیں 13 جون کو خلیج عمان میں تیل بردار دو جہازوں پرحملہ کیا گیا تھا تاہم جہازوں کے عملے کو باحفاظت نکال لیا گیا تھا۔گزشتہ ماہ فجیرہ کے ساحلی شہر کی بندرگاہ پر 4 جہازوں میں تخریب کاری کی کوشش پر متحدہ عرب امارات کی جانب سے مذمتی بیان سامنے آیا تھا، تاہم اس سے قبل وہ ساحلی علاقے میں کسی بھی قسم کے حملوں کی تردید کررہے تھے۔بعد ازاں سعودی عرب کا کہنا تھا کہ ساحل پر تخریب کاری کا نشانہ بنائے جانے والے 4 جہازوں میں سے 2 تیل بردار جہاز ان کے ہیں، جنہیں حملے میں شدید نقصان پہنچا تھا۔

موضوعات:

loading...