امریکہ میں سرد ترین موسم کی لہر، پولر وورٹیکس کے غیر معمولی اثرات مرتب

  جمعہ‬‮ 1 فروری‬‮ 2019  |  12:35

واشنگٹن(این این آئی)امریکاکے وسطی اور مغربی شہر شدید ترین ٹھنڈ کی لہر سے گزر رہے ہیں۔ قطب شمالی سے آنے والے برفیلے پولر وورٹیکس کے نتیجے میں زمین جم کر پھٹنے لگی ہے، ریلوے ٹریک جلائے جا رہے ہیں اور یہ بحث شروع ہو گئی ہے کہ کیا امریکی باشندہ نرم پڑ رہا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق کرائیوسیزم جنھیں فراسٹ کوئے کس بھی کہا جاتا ہے، کی اطلاعات اوہائیو اور پینسلوینیا کی ریاستوں سے مل رہی ہیں جہاں کہ رہائشیوں کا کہنا تھا کہ انھیں زمین کی تہہ سے اونچی اونچی آوازیں سنائی دے رہی ہیں۔ادھر شکاگو میں مسافر ٹرین کی


پٹڑیوں پر آگ لگا دی گئی ہے تاکہ لوہا جمے نہیں اور ٹرینیں چلتی رہیں۔بنیادی طور پر یہ آگ گیس سے چلنے والے ہیٹرز کی ہے اور آپ جو دیکھ رہے ہیں یہ بڑی گیس کی جالی ہے۔انھوں نے کہا کہ آگ کی گرمی لوہے کو جمنے سے روکتی ہے، جس کی وجہ سے پٹڑیاں ٹوٹ سکتی ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ کانٹوں کو جمنے یا ٹریک کے پیچ نکلنے سے بھی روکتی ہے۔یہ پہلی بار نہیں ہے کہ موسم کی وجہ سے ڈاک پہنچانے کا عمل روک دیا گیا ہو، لیکن عام طور پر اس کی وجہ ٹھنڈی ہواؤں کے نتیجے میں سڑکوں پر بڑی تعداد میں جمنے والی برف ہوتی ہے۔سرکاری موسمیاتی ادارے (نیشنل ویدر سروس) نے آئیووا میں لوگوں کو گہرے سانس لینے سے خبردار کیا ہے اور سردی میں کم گفتگو کرنے کا کہا ہے۔

موضوعات:

loading...