سی پیک کے مقابلے میں چاہ بہار کے بعد ایک اور بڑا منصوبہ کھڑا کردیاگیا،بھارت کا پاکستان اورچین کو بڑا سرپرائز،دھماکہ خیز اعلان کردیاگیا

  بدھ‬‮ 6 دسمبر‬‮ 2017  |  19:35

لندن(آئی این پی)بھارت چینی منصوبہ اوبور کے تحت بچھائی جانے والی آپیٹک فائبر کے مد مقابل 500ملین ڈالر کی لاگت سے فائبر آپیٹک کیبل کا نظام تعمیر کرے گا، کیبل نظام کی لمبائی ہانگ کانگ سے اٹلی تک 16650کلومیٹر ہو گی، فائبر آپیٹک کیبل نظام 2020تک مکمل کیا جائے گا، اس نظام سے بھارت سے مشرق وسطی اور مغرب تک سرچنگ کی صلاحیت کی طلب کو بہتر بنانے اور نیٹ ورک کی استحکام کو بڑھانے میں مدد ملے گی۔غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق چائنا پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ بندی (سی پیک) پر بھارتی اعتراضات کے حوالے سے چینی جوابات

کے پیش نظر بھارت اس منصوبہ کے مدمقابل ایک اور منصوبہ لا رہا ہے ۔ اس منصوبے کو نیو ایگل آبدوزکیبل سسٹم کا نام دیا گیا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس منصوبے کی لمبائی 16650کلومیٹر ہو گی جو ہانگ کانگ سے اٹلی تک کی مسافت طے کرے گی۔ اس منصوبے پر 500ملین ڈالر لاگت آئے گی۔ ذرائع کے مطابق اس منصوبہ پر تیزی سے کام کرتے ہوئے اس کو 2020تک استعمال کے قابل بنایا جائے گا۔ ٹیلی مواصلات سروس فراہم کنندہ گلوبل کلاؤڈ ایکسچینج (جی سی ایکس)، بھارت کی ریلیز کمیونیشن (RCOM) کے ماتحت ادارے نے اعلان کیا ہے کہ یہ 500 ملین ملین آبدوز فائبر اپٹک کیبل کے نظام کی تعمیر کرے گی جس میں ہانگ کانگ سے اٹلی تک 16،650 کلومیٹر کا فاصلہ بڑھ جائے گا۔جی سی ایکس، جو 67000 کلو میٹر سے زائد کی دنیا کا سب سے بڑا نجی اندراج کیبل نیٹ ورک کا مالک ہے نے کہا کہ نئے ایگل آبدوز کیبل سسٹم کی تعمیر اس کے "کلاؤڈ اور فائبر انیشی ایٹو" کا حصہ بن جائے گی ۔

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں