china-pakistan

چینی اور پاکستانی ڈاکٹرز مل کر پاکستان میں کیا کام کرنے جا رہے ہیں ؟ جان کر پاکستانی عوام کی خوشی کا کوئی ٹھکانہ نہیں رہے گا

  پیر‬‮ 20 مارچ‬‮ 2017  |  11:27
اسلام آباد (آئی این پی ) چینی اور پاکستانی ڈاکٹروں کی ایک ٹیم کٹے ہونٹوں اور تالو کی سرجری کے لئے چالیس بچوں کی سرجری کرے گی ، یہ آپریشن 21سے 26مارچ تک جاری رہے گا ، آپریشن بلامعاوضہ ایک مقامی ہسپتال میں کئے جائیں گے ، یہ پہلا موقع ہے کہ چینی سرجنوں نے تالو اور کٹے ہونٹوں والے بچوں کی سرجری کے لئے اپنی خدمات بلامعاوضہ پیش کی ہیں ، اس کا اہتمام تالو اور کٹے ہونٹوں کی ایسوسی ایشن (آئی سی ایل اے پی اے ) کے صدر ایم آفتاب اور بانی ارکان زینب سلیمان ،مسز فرحت

(خبر جا ری ہے)

رحمان کررہے ہیں ، انہوں نے اس سلسلے میں اخبار نویسوں کو بتایا کہ ان امراض کا شکار بچوں کو بروقت علاج کی سہولت کی ضرورت ہوتی ہے،یہ بیماری قابل علاج ہے اگر اس کا بروقت علاج کر لیا جائے تو مریض مکمل صحت یاب ہو سکتا ہے کیونکہ اس کے نفسیاتی اثرات بھی مرتب ہو سکتے ہیں ، ایسوسی ایشن متاثرہ بچوں کو طبی خدمات فراہم کرنے کا نیک فریضہ کچھ ماہرین سرجنز کے تعاون سے کئی برسوں سے انجام دے رہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ پیدا ہونے والے 530 پاکستانی بچوں میں سے ایک بچہ اس مرض کا شکار ہو سکتا ہے، اگر اس کا ابتدائی عمر میں مناسب علاج نہ کیا جائے تو اس سے آگے چل کر بہت سی پیچیدگیاں پیدا ہو سکتی ہیں ، کٹے ہونٹوں کے علاج کے لئے 3سے 6ماہ جبکہ کٹے تالو کےعلاج کے لئے 11سے 12ماہ درکار ہوتے ہیں ،پاکستان میں ہر سال پیداہونے والے تقریباً 10ہزار بچے ان نقائص کا شکار ہوتے ہیں اور پاکستان میں اس وقت تقریباً دو لاکھ بچوں میں یہ نقائص پائے جاتے ہیں جو کہ خطرناک علامت ہے ،کٹے ہونٹوں کا نقص کٹے تالو کی نسبت جلد ظاہر ہوتا ہے ، اس مرضسے متاثرہ بچوں کے خاندانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ سرجری کے انتظامات کے سلسلے میں ایم آفتاب سے موبائل نمبر 03215568018پر رابطہ قائم کریں ۔

اسلام آباد (آئی این پی ) چینی اور پاکستانی ڈاکٹروں کی ایک ٹیم کٹے ہونٹوں اور تالو کی سرجری کے لئے چالیس بچوں کی سرجری کرے گی ، یہ آپریشن 21سے 26مارچ تک جاری رہے گا ، آپریشن بلامعاوضہ ایک مقامی ہسپتال میں کئے جائیں گے ، یہ پہلا موقع ہے کہ چینی سرجنوں نے تالو اور کٹے ہونٹوں والے بچوں کی سرجری کے لئے

اپنی خدمات بلامعاوضہ پیش کی ہیں ، اس کا اہتمام تالو اور کٹے ہونٹوں کی ایسوسی ایشن (آئی سی ایل اے پی اے ) کے صدر ایم آفتاب اور بانی ارکان زینب سلیمان ،مسز فرحت اختر رحمان کررہے ہیں ، انہوں نے اس سلسلے میں اخبار نویسوں کو بتایا کہ ان امراض کا شکار بچوں کو بروقت علاج کی سہولت کی ضرورت ہوتی ہے،یہ بیماری قابل علاج ہے اگر اس کا بروقت علاج کر لیا جائے تو مریض مکمل صحت یاب ہو سکتا ہے کیونکہ اس کے نفسیاتی اثرات بھی مرتب ہو سکتے ہیں ، ایسوسی ایشن متاثرہ بچوں کو طبی خدمات فراہم کرنے کا نیک فریضہ کچھ ماہرین سرجنز کے تعاون سے کئی برسوں سے انجام دے رہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ پیدا ہونے والے 530 پاکستانی بچوں میں سے ایک بچہ اس مرض کا شکار ہو سکتا ہے، اگر اس کا ابتدائی عمر میں مناسب علاج نہ کیا جائے تو اس سے آگے چل کر بہت سی پیچیدگیاں پیدا ہو سکتی ہیں ، کٹے ہونٹوں کے علاج کے لئے 3سے 6ماہ جبکہ کٹے تالو کے

علاج کے لئے 11سے 12ماہ درکار ہوتے ہیں ،پاکستان میں ہر سال پیداہونے والے تقریباً 10ہزار بچے ان نقائص کا شکار ہوتے ہیں اور پاکستان میں اس وقت تقریباً دو لاکھ بچوں میں یہ نقائص پائے جاتے ہیں جو کہ خطرناک علامت ہے ،کٹے ہونٹوں کا نقص کٹے تالو کی نسبت جلد ظاہر ہوتا ہے ، اس مرض

سے متاثرہ بچوں کے خاندانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ سرجری کے انتظامات کے سلسلے میں ایم آفتاب سے موبائل نمبر 03215568018پر رابطہ قائم کریں ۔

موضوعات:

loading...

روزانہ کی دس بڑی خبریں بذریعہ ای میل حاصل کریں

بذریعہ ای میل آپ کو دس بڑی خبروں کے ساتھ ساتھ کرنسی اور سونے کے ریٹس بھی بھیجے جائیں گے۔